سید نجیب الحسن زیدی: جس معاشرے میں شبہات کا ازالہ نہ ہو وہ معاشرہ غیر یقینی کیفیت کا شکار ہو کر دشمن کے ہاتھوں آسانی سے شکست کھا جاتا ہے، لیکن بسا اوقات شبھہ اور سوال کے درمیان فرق کے نہ ہونے کی بنا پر لوگ شبھہ کو سوال اور سوال کو شبھہ میں خلط ملط کر دیتے ہیں جبکہ دونوں میں فرق ہے، سوال سمجھنے کے لئے کیا جاتا ہے جبکہ شبھہ کسی مسئلہ
محمد لطیف مطہری کچوروی: اسحاق کندی عراق کے دانشوروں اور فلاسفہ میں سے تھا اور لوگوں میں علم، فلسفہ اور حکمت کے میدان میں شہرت رکھتا تھا، لیکن اسلام قبول نہیں کرتا تھا اور اُس نے اپنی ناقص عقل سے کام لیتے ہوئے فیصلہ کر لیا کہ قرآن میں موجود متضاد و مختلف امور کے بارے میں ایک کتاب لکھے، کیونکہ اُس کی نظر میں قرآن کی بعض آیات بعض دوسری آیات کے ساتھ ہم
محمد یعقوب بشوی: امام حسین(علیہ السلام )سے منسوب ہر چیز تعجب آور اور ہر کام منفرد ہے ۔یہاں سے ہمیں امام حسین(علیہ السلام) کی الہی اور ملکوتی شخصیت کو سمجھنے میں مدد ملتی ہے کہ آپ وہ ہستی ہیں کہ جس کا تذکرہ، موجب سکون اور جس کی یاد،باعث رشد اور حس نام دلوں کا چراغ ہے ۔ہے کوئی جس کی شخصیت زبان رسالت چوس چوس کر بنی ہو،جس کے لئے رسول اللہ(صلی اللہ علیہ
محمد علی شریفی:: امام حسین علیہ السلام نے اپنی لازوال اور عظیم قربانی کے ذریعے اہل ایمان کو یہ درس دیا کہ جب بھی دین و مکتب کی بنیادیں خطرے میں پڑ جائیں تو اس کی حفاظت کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرنا چاہیئے۔ جب امام عالی مقام نے دیکھا کہ اسلامی معاشرے کی زمامِ حکومت، یزید جیسے فاسق و فاجر حاکم کے ہاتھوں میں آگئی ہے جو تمام احکام الٰہی اور
روایاتِ معصومین ؑ میں زیارت ِ امام حسین ؑ کے بارے میں بہت تاکید کی گئی ہے۔  اعمال کا ثواب معرفت کے مطابق ہے۔ لہذاہمیں خود اس زیارت کی بھی معرفت ہونی چاہیے۔ اس زیارت کی فضیلت  کے بیان اور معرفت کیلئے کچھ روایات پیشِ خدمت ہیں۔ روایت اول : محمد بن مسلم نے حضرت امام محمد باقر   ؑ سے روایت کی ہے: “مُرُوا شِیعَتَنَا بِزیَارَةِ قَبْر الْحُسَیْنِ بْنِ عَلیٍّ   ؑ، فَاِنَّ اِتیَانَہُ مُفْتَرَضٌ عَلَی
توقیر کھرل: حضرت امام حسینؑ کے سر مبارک کا نوک نیزہ پر قرآن پڑھنا یہ تاریخ کربلاء میں ایسی واضح بات ہے کہ جس کو علماء تشیع اور علماء اہلسنت سب نے صحیح سند کے ساتھ نقل کیا ہے۔ جب کاروان حریت 12 محرم کو کوفہ میں پہنچا۔ تین دن قید میں رکھنے کے بعد ابن زیاد نے 15 محرم کو امام حُسین کا سر دوسرے شہداء کے سروں کے ساتھ یزید کی طرف شام

ناجی فرقہ

Posted by nmtisb on  October 5, 2020
0
قرآن کریم میں لفظ *شیعہ* پیغمبر اکرم (صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم) اور بڑی شخصیتوں کی پیروی کرنے والوں کے معنی میں استعمال ہوا ہے ۔ خداوندعالم (حضرت موسی (علیہ السلام) کے واقعہ میں)فرماتا ہے : ” وَ دَخَلَ الْمَدینَةَ عَلی حینِ غَفْلَةٍ مِنْ اٴَہْلِہا فَوَجَدَ فیہا رَجُلَیْنِ یَقْتَتِلانِ ہذا مِنْ شیعَتِہِ وَ ہذا مِنْ عَدُوِّہِ فَاسْتَغاثَہُ الَّذی مِنْ شیعَتِہِ عَلَی الَّذی مِنْ عَدُوِّہِ “(۱) ۔ اور موسٰی شہر میں اس وقت داخل ہوئے

حضرت عمار یاسر

Posted by nmtisb on  September 28, 2020
0
جنگ صفین میں  9 صفر 37 ہجری کو جنگ کرتے کرتے ہوئے اچانک آپ نے  پیاس محسوس کی، آپ واپس آئے اور پانی طلب کیا تو قبیلہ بنی شیبان کی ایک خاتون نے آپ کو دودھ کا پیالہ پیش کیا ۔ اس وقت  آپ کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ و آلہ کی  حدیث یاد آگئی اور آپ نے فرمایا:آج میں شہید ہو جاوں گا اور اپنے دوستوں سے اس جہاں میں ملاقات ہوگی۔ دوبارہ